امریکن فشریز سوسائٹی نے یونیورسٹی آف بلتستان کے وائس چانسلرکو تین ٹریول ایوارڈ عطا کردیئے

by Shabbir Sarwar | July 8, 2019 9:01 pm

 ڈاکٹر نعیم خان کو انٹرنیشنل پروفیشنل ٹریول ایوارڈ، کارل سولیوین ٹریول ایوارڈ اور کیلفورنیا نویڈا چپٹر سیمی سالانہ ٹریول ایوارڈ سے نوازا گیا

اسلام آباد (پ ر) امریکن فشریز سوسائٹی نے یونیورسٹی آف بلتستان کے وائس چانسلرکو تین ٹریول ایوارڈ عطا کردیئے ہیں۔ سوسائٹی نے ڈاکٹر نعیم خان کو انٹرنیشنل پروفیشنل ٹریول ایوارڈ2019، کارل سولیوین ٹریول ایوارڈ 2019، اور کیلفورنیا نویڈا چپٹر سیمی سالانہ ٹریول ایوارڈ 2019ء کے تحت سوسائٹی کی 149ویں سالانہ میٹنگ اور امریکن فشریز سوسائٹی اور وائلڈ لائف سوسائٹی نویڈا یو ایس اے کے اشتراک سے 29ستمبر 2019ء سے شروع ہونے والی ہفت روزہ کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی  ہے۔ ڈاکٹر محمد نعیم خان فشریز بیالوجی کے شعبے میں عالمی شہرت یافتہ سکالر اور ریسرچر ہیں۔ وہ اس کانفرنس میں اپنا خصوصی مقالہ پڑھیں گے اور سالانہ میٹنگ میں مہمان مقرر کے طور پر شرکت کریں گے۔

ڈاکٹر نعیم اس شعبے میں مہارت اور تجربے کی بنیاد پر عالمی سطح کے اس ٹریول ایوارڈ کا حقدار  قرار پائے  ہیں۔ یہ نہ صرف گلگت بلتستان بلکہ پورے پاکستان کے لئے بہت بڑا اعزاز ہے۔ ڈاکٹر نعیم خان 1992ء سے امریکن فشریز سوسائٹی کے باقاعدہ ممبر ہیں جب وہ کینیڈا میں پی ایچ ڈی کی تعلیم حاصل کررہے تھے۔ یہ سوسائٹی امریکہ میں ایک قابل اعتماد ادارہ ہے جو سائنٹفیک بنیادوں پر کام کرتی ہے، اور اسکے دنیا بھر میں 60ہزار سے زائد ممبر ہیں جن میں یونیورسٹی پروفیسرز، سرکاری ملازم، یو ایس فیش اور وائلڈ لائف سروس اور دیگر شعبوں کے سٹاف شامل ہیں۔ یہ سوسائٹی صرف ان سائنسدانوں کو ایوارڈ جاری کرتی ہے جن کی فشریز کے شعبے میں عالمی سطح پر نمایاں کارکردگی اور خدمات ہوں۔

یونیورسٹی آف بلتستان کے وائس چانسلر کو مسلسل پانچویں دفعہ یہ ایوارڈ جیتنے  کا اعزاز حاصل ہوا ہے۔ انہوں نے 2017,2016،2014اور 2018میں بھی یہ اعزاز حاصل کیا۔ اس کے علاوہ انہوں نے کئی قومی و بین الاقوامی سطح کے گرانٹ، ایوارڈ اور پراجیکٹ حاصل کرچکے ہیں۔  یونیورسٹی  ترجمان نے کہا کہ  یونیورسٹی آف بلتستان کی خوش نصیبی ہے کہ انہیں ایک ایسا وائس چانسلر میسر آیا ہے جو نہ صرف پاکستان میں بلکہ دنیا بھر میں ایک نام اور ایک مقام رکھتا ہے۔ اس تین اہم ایوارڈ کے حصول کے بعد وائس چانسلر نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ بلتستان یونیورسٹی کو عالمی سطح پر متعارف کرانے کے لئے دن رات کام جاری رکھیں گے جب  تک کہ اس ادارے کو عالمی سطح پر تسلیم کریں گے اور پاکستان میں اس کا اعلیٰ مقام اور درجہ خود بخود بنے گا۔   وہیونیورسٹی کو بہت جلد ملک کی بہترین یونیورسٹیوں کی صف میں لاکھڑا کریں گے۔ 

 

Comments

comments

Source URL: http://urdu.educationist.com.pk/?p=2969