شعبہ تعلیم  تباہ، نسلیں تباہ ہو رہی ہیں،حکومت معاملات نہیں دیکھ رہی ۔جسٹس گلزار

شعبہ تعلیم  تباہ، نسلیں تباہ ہو رہی ہیں،حکومت معاملات نہیں دیکھ رہی ۔جسٹس گلزار
March 15 20:22 2019 Print This Article

 

لاہور (دی ایجوکیشنسٹ 15 مارچ  2019 عثمان بے خبر )سپریم کورٹ نے نجی جامعات کی بھرمار اور ڈگریوں سے متعلق کیس کی سماعت  کے دوران اٹارنی جنرل اور ایچ ای سی سے 15 روز میں جواب طلب کر لیا ہے ۔جمعرات کو سپریم کورٹ  میں نجی جامعات کی بھر مار اور ڈگریوں سے متعلق   کیس کی سماعت جسٹس گلزار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی ۔جسٹس گلزار نے کہا کہ حکومت ان معاملات کو کیوں نہیں دیکھ رہی ،تعلیمی سیکٹر تباہ ہو رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جامعات کی مشروم گروتھ ہو رہی ہے ۔جسٹس گلزار نے کہا کہ ڈگریاں بیچی جا رہی ہیں ،نسلیں تباہ ہو رہی ہیں ۔ایک نسل تباہ ہو چکی ہے  دوسری لائن میں لگی ہوئی ہے۔جسٹس  گلزارنے کہا کہ یہ معاملات عدالتوں  میں لانے سے مسئلہ حل نہیں ہو گا ،نیب اور ایف آئی اے بھی کیا کر لیں گی ، پرسٹن یونیورسٹی کا مین کیمپس کوہاٹ میں ہے ،میں نے اسکا بورڈ کراچی میں دیکھا ،الخیر یونیورسٹی نے ایگزیکٹ والا کام کر رکھا ہے ۔اس کیس  کے حوالےسے  مزید سماعت 15 روز تک  ملتوی  کر دی گئی ہے۔

Print this entry

Comments

comments