بچوں کو کتابیں رٹانے کی بجائے تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مرادراس

بچوں کو کتابیں رٹانے کی بجائے تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مرادراس
March 09 15:39 2019 Print This Article

ہمارے بچے پر اعتماد اور با صلاحیت ہیں اس لیے ان میں نظریاتی تعلیم کے رحجان کو فروغ دیا جارہا ہے ۔
پبلک سلکولوں کا معیار نجی سکولوں سے بھی بہتر کیا جائے گا ۔صوبائی وزیر 

للاہور (دی ایجوکیشنسٹ۔عثمان بے خبر )صوبائی وزیر برائے سکول ایجوکیشن مراد راس نے کہا ہے کہ اساتذہ بچوں کی زندگیوں پر براہ راست اثر انداز ہوتے ہیں ۔اس لیے اساتذہ اپنے بچوں کے ساتھ مشفقانہ اور دوستانہ رویہ روا رکھیں تاکہ اخلاقی و تعلیمی اور ذہنی لحاظ سے ایک صحت مند قوم پروان چڑ ھ سکے ۔حکومت شب وروز معیاری نظام تعلیم کے فروغ کے لیے کام کر رہی ہے کیوں کہ ملک و قوم کی ترقی اور خوشحالی کا راز بہترین معیار تعلیم میں مضمر ہے ۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر تعلیم نے الحمراء ہال میں منعقدہ تقریب تقسیم انعامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ سکول ایجوکیشن کا اس وقت پورا دھیان بچوں کو کتابیں رٹانے کی بجائے ان کی تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے پر ہے۔تاکہ طلباء میں اوائل عمر ہی سے خود اعتمادی اور قوت ارادی پیدا کر کے مستقبل کے لیے پراعتماد اور با وقار قوم تخلیق کی جاسکے ۔
صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ ہماری پوری کوشش ہے کہ پبلک سکولوں کا معیار نجی سکولوں سے بہتر کیا جائے ۔ہمارے بچے پر اعتماد اور با صلاحیت ہیں اس لیے ان میں نظریاتی تعلیم کے رحجان کو فروغ دیا جا رہا ہے ۔انہوں نے طلباء و طالبات کو کہا کہ محنت ہی میں عظمت ہے اس لیے زندگی میں مثبت اہداف کے حصول کے لیے بھرپور جدوجہد کریں20 ۔2019 احترام اساتذہ کے سال ہوں گے ۔صوبائی وزیر نے پی ایچ اے کی تعلیمی سرگرمیوں کاانعقاد اور گرین کلین پاکستان کے حوالے سے کی جانے والے کاوشوں کو سراہا ۔چیئر مین پی ایچ اے سید گیلانی نے کہا کہ والدین اور اساتذہ سے بچے سے ادب کا رشتہ ہے جس سے انسان کی کامیابی مشروط ہے۔اس موقع پر نادیہ فاروقی اور ڈائریکٹر ز پی ایچ اے ، اساتذہ طلباء و طالبات اور کثیر تعداد میں سول سوسائٹی کے نمائندگان موجود تھے ۔تقریب کے اختتام پر صوبائی وزیر نے طلباء وطالبات اور اساتذہ میں تعریفی اسناد تقسیم کیں ۔

Print this entry

Comments

comments

  Categories: