سندھ کی دوسرے صوبوں پربرتری: وزیر تعلیم نے اپنی بیٹی کو سرکاری اسکول میں داخل کرادیا

سندھ کی دوسرے صوبوں پربرتری: وزیر تعلیم نے اپنی بیٹی کو سرکاری اسکول میں داخل کرادیا
October 12 17:14 2018 Print This Article

کراچی(سٹاف رپورٹ): وزیر تعلیم سندھ سردار شاہ نے اسمبلی میں کیے گئے اعلان کے مطابق اپنی اکلوتی بیٹی کو سرکاری اسکول میں داخل کرا دیا۔

صوبائی وزیر تعلیم نے اپنی 8 سالہ بیٹی کیف کو حیدرآباد کے گورنمنٹ گرلز میراں اسکول میں تیسری جماعت میں داخل کرایا۔

اس موقع پرصوباءی وزیرتعلیم نے کہا کہ جب ابتدا منسٹر اور ٹیچر سے ہوگی تو تعلیم کا معیار بھی اچھا ہوگا، سب سے بڑا مسئلہ اونرشپ کا ہے اور شروعات اوپر سے ہوگی تو تعلیم کا معیار بھی اچھا ہوگا۔

سردار شاہ کایہ بھی کہنا تھا کہ سرکاری اسکولوں پر اعتماد بڑھانے کی طرف پہلا قدم ہے، ابھی آغاز ہے اور امید ہے کہ یہ سلسلہ آگے بڑھے ا۔

وزیر تعلیم سندھ کا کہنا تھا کہ میں نے اپنی بچی کو سرکاری اسکول میں داخل کرادیا اب دوسرے اراکین کے لیے امتحان ہے۔

صوبائی وزیر تعلیم کی صاحبزادی کیف کا اس موقع پر کہنا تھا کہ میرے والدین نے سرکاری اسکول سے پڑھا اور میں بھی سرکاری اسکول سے پڑھنا چاہتی ہوں، آج اسکول کا ماحول دیکھ کر بہت اچھا لگا ہے۔

یاد رہے کہ صوبائی وزیر تعلیم سردار شاہ نے سندھ اسمبلی میں کھڑے ہو کر اعلان کیا تھا کہ وہ اپنی صاحبزادی کو سرکاری اسکول میں داخل کروا کر سرکاری اسکولوں پر عوام کا اعتماد بڑھائیں گے اور معیار تعلیم بلند کرنے کے لیے اقدامات کریں گے۔

سرکاری سکولوں کی ابترحالت کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ اعلیٰ سرکاری عہدیداران،منسٹرز،سینٹرز،اراکین اسمبلی حتٰی کہ سرکاری سکولوں کے بیشتر استاد بھی اپنے بچوں کوپراءیویٹ سکولوں سے تعلیم دلواتے ہیں۔

وفاقی حکومت اوردیگرصوباءی حکومتوں کو بھی چاہیے کہ وہ اراکین اسمبلی اورمنسٹرزکوقاءل کرے کہ وہ اپنے بچوں اوربہن بھاءیوں کوسرکاری تعلیمی اداروں سے تعلیم دلواءیں تاکہ ان کی حالت بھی بہترہواوران سکولوں پرعام لوگوں کااعتمادبھی بحال ہوسکے۔

سردارشاہ یقیناًبارش کاپہلاقطرہ ثابت ہوں گےاوران کی دیکھادیکھی دیگرلوگ بھی اپنے بچوں کوسرکاری تعلیمی اداروں سے تعلیم دلواءیں گے۔

Print this entry

Comments

comments

  Categories: