منفی سوچ سے مثبت سوچ کی طرف

منفی سوچ سے مثبت سوچ کی طرف
May 23 10:09 2018 Print This Article

تحریر:
محمد وقاص گلاب

انسان کی فطرت ہے کہ وہ جس ماحول میں رہتا ہے اس میں اسی کے مطابق تبدیلیاں آنا شروع ہوجاتی ہیں ۔ جب کہ آپ کی اصل پہچان آپ کی سوچ سے ہوتی ہے۔ آپ ویسے ہی ہوتے ہیں جیسے آپ کی سوچ ہوتی ہے۔ آپ کی زبان سے نکلے الفاظ دوسرون پر گہرے اثرات ڈالتے ہیں اگر ان الفاظ کا اظہار مثبت سوچ کے ساتھ کیا جاے تو آپ دوسروں کے د ل میں اتر سکتے ہیں اور اگر ان  الفاظ کا اظہار منفی سوچ کے ساتھ کیا جاے تو آپ کسی کے دل سے اتر سکتے ہیں ۔ آپ کا اچھا کردار کسی کو اچھا بنا سکتا ہے اپکا اچھا اخلاق کسی میں اچھا اخلاق پیدا کر سکتا ہے اگر آپ کسی سے بہتر انداز میں بات کرتے ہیں تو آپ کسی منفی رویے والے  شخص کو مثبت رویے میں بدل سکتے ہیں۔ حضرت واصف علی واصف نے فرمایا “اصل حکومت دلوں پہ حکومت ہوتی ہے”اگر اپ خود کی زندگی پر نظر ڈالیں تو آپ کو اندازہ ہوجاے گا کہ آپ نے ز ند گی میں کتنے لوگوں کے دلوں پر حکومت کی۔
کسی بھی شخص کی زندگی میں وہ دن اہمیت کا حامل ہوتا ہے جس دن اسے اس حقیقت کا پتا لگ جاے کہ اس کی ساری زندگی میں ناکامی ا ور کامیابی کا تعلق زیادہ تر جذبات پر اور اس کے کنٹر ول کے معاملے پر ہے. ۔بہت سے لوگ اس غلط گہمی کا شکار ہوتے ہیں جو دوسروں کو بدلنا چاہتے ہیں آپ چاہتے ہیں جو لوگ منفی سوچتے ہیں وہ مثبت سوچنا شروع کر دیں  جبکہ تب تک نہیں بدل سکتا جب تک وہ خود نہ اپنے آپ کو بدلنہ چاہے اس لیے خود کو بلدنے کی ذمہ داری لینی چاہیے کیونکہ آپ جب آپ خود چراغ بن جاتے ہیں تو دوسرے آپ سے خود ہی روشناس ہونا شروع ہوجایں گے ۔
منفی سوچ سے مثبت کی طرف آنے کا ایک طریقہ یہ ہے کہ اپنے اردگرد کے ماحول کو مثبت بنانا شروع کر دےں مثبت سوچ کو فروغ دے تو منفی سوچ کا وقت ہی نہیں رہے گا کیونکہ آپ جب اپنی سوچ کو بدل لیں گے آپکی دنیا خود ہی بدل جاے گی۔

Print this entry

Comments

comments

  Categories: