عورت معاشرہ کا ایک جزو لازم

عورت معاشرہ کا ایک جزو لازم
March 09 16:11 2018 Print This Article

تحریر:محسن لطیف

8 مارچ پاکستان سمیت عالمی دنیا میں عورتوں کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔ عورت کو ہمارے معاشرے میں ایک نمایاں مقام حاصل ہے۔ اس کے کردار کے بغیر کوئی بھی معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا۔ گویا عورت ہر معاشرہ کی تکمیل کا جزو لازم ہے۔
اپنے گردوپیش میں نظر ڈالیں تو شاید ہی کوئی زندگی کا ایسا شعبہ دکھائی دےکہ جس ميں عورت، مردوں کے شانہ بشانہ قومی ترقی میں شامل نہ ہو۔ اسلام میں عورتوں کو مکمل آزادی دی گئی ہے۔بلکہ اسلامی تعلیمات کے موازنہ سے یہ بات ثابت ہے کہ عورت کے بے بہا حقوق مردوں کے ذمہ ڈالے گئے ہیں۔
دور جدید سے موازنہ کریں تو معلوم ہوتا ہے کہ عورتوں کی پڑھی لکھی تعداد بہ نسبت مردوں کے زیادہ ہے۔ لیکن عورتوں کو ابھی وہ اعلی مقام حاصل نہیں ہوا جس کی وہ اصل حقدار ہیں۔
عرب میں زمانہ جاہلیت میں عورتوں پر جو ظلم و ستم ہوتے رہے، وہ بھی کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں۔ اسلام نے عورتوں کو ایک با عزت مقام دیا۔ عورت کو مردوں کے
برابر حقوق دلواۓ۔

اسی آزادی کی وجہ سے وہ ہر شعبے میں بخوبی اپنا اہم کردار ادا کر رہی ہیں۔ جن میں آرمی، پولیس ، ڈاکٹر ز وغیرہ شامل ہیں۔لیکن اس سب کے باوجود عورتیں اس معاشرے کے لیے بہت سی قربانیاں دیتی ہے اور مشکلات کا سامنا کرتی ہیں۔ ان کی ان کوششوں کے پیش نظر ان کو خراج تحسین پیش کرنا چاہئیے اور ان کے لیے آسانیاں پیدا کرنی چاہیں۔ تب ہی تمام ملک و دنیا اس دن کو منائے تاکہ ان کی حوصلہ افزائی ہو اور وہ مزید بہتر طریقے سے اپنی ذمہ داریوں کو نبھا سکيں۔

Print this entry

Comments

comments