پنجاب یونیورسٹی میں تدریسی سرگرمیاں پرامن ماحول میں جاری رہنی چاہئیں.وزیراعلٰی شہبازشریف

پنجاب یونیورسٹی میں تدریسی سرگرمیاں پرامن ماحول میں جاری رہنی چاہئیں.وزیراعلٰی شہبازشریف
January 24 21:28 2018 Print This Article

کسی کو پنجاب یونیورسٹی جیسی اعلیٰ درسگاہ کا تدریسی ماحول خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔شہبازشریف

پنجاب یونیورسٹی کا تدریسی ماحول خراب کرنیوالے عناصر کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کی جائے۔وزیراعلیٰ پنجاب

لاہور(سٹاف رپورٹ) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی زیرصدارت کابینہ کمیٹی برائے امن و امان کا اجلاس منعقد ہوا ،جس میں صوبے کی امن و امان کی مجموعی صورتحال اور پنجاب یونیورسٹی میں پیش آنے والے واقعہ کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن اور قائم مقام وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی نے واقعہ کے بارے میں بریفنگ دی ۔

وزیراعلیٰ شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی میں تدریسی سرگرمیاں پرامن ماحول میں جاری رہنی چاہئیں۔گڑبڑ کرنے والے عناصر کے خلاف قانون کے تحت کارروائی کی جائے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ کسی کو پنجاب یونیورسٹی جیسی اعلیٰ درسگاہ کا تدریسی ماحول خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ قانون کی حکمرانی کو ہر قیمت پر یقینی بنایا جائے۔انہوںنے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی کا تدریسی ماحول خراب کرنیوالے عناصر کیخلاف بلاامتیاز کارروائی کی جائے اورپنجاب یونیورسٹی میں آئندہ ایسے واقعہ کی روک تھام کیلئے موثر اقدامات اٹھائے جائیں۔

اس ضمن میں شفاف اور بے لاگ حکمت عملی مرتب کی جائے۔انہوںنے کہا کہ تدریسی ماحول خراب کرنیوالے عناصر کیخلاف بلاامتیاز کارروائی ضروری ہے تاکہ طلبا و طالبات پرسکون ماحول میں تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھ سکیں۔ماضی میں کئے جانیوالے فیصلوں پر عملدرآمد کرانا متعلقہ محکمے اور یونیورسٹی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے۔ انہوںنے کہا کہ آئندہ فیصلوں پر عملدرآمد کے حوالے سے فعال اور متحرک انداز میں کام کیا جائے۔اجلاس کے دوران پنجاب یونیورسٹی میں پرامن ماحول میں تدریسی سرگرمیاں جاری رکھنے کے حوالے سے متعدد تجاویز کا جائزہ لیاگیا۔

صوبائی وزراء رانا ثناء اللہ، کرنل (ر) ایوب گادھی، سید رضا علی گیلانی، جہانگیر خانزادہ، مشیر رانا مقبول احمد، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، انسپکٹر جنرل پولیس اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

Print this entry

Comments

comments

  Categories: