پنجاب سکول ایجوکیشن اورسپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹس میں391ملین روپے کی بے ضابطگیوں کاانکشاف

پنجاب سکول ایجوکیشن اورسپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹس میں391ملین روپے کی بے ضابطگیوں کاانکشاف
October 24 02:39 2017 Print This Article

۱اے آر ساجد

لاہور۔ پنجاب سکول ایجوکیشن اورسپیشل ایجوکیشن ڈیبارٹمنٹس میں مجموعی طورپر319.31ملین روپے کی بے ضابطگیوں کاانکشاف ہواہے۔مالی سال16-2015کی آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق بے ضابطگیوں میں آڈٹ کے لئے ریکارڈکی عدم فراہمی،مشکوک اورزائدادائیگیاں شامل ہیں۔

سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب

سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میں دوقسم کی بے ضابطگیاں پائی گئی ہیں۔349.64روپے کی بے ضابطگی میں آڈٹ کے لئے ریکارڈنہ فراہم کرناہے۔مختلف اداروں اورافرادکوادائیگیوں کاریکارڈفراہم نہیں کیاگیاہے جن میں اس وقت کے سیکرٹری کی طرف سے348.1ملین روپے کی ادائیگیوں کاریکارڈفراہم نہیں کیاگیاجبکہ گورنمنٹ کالج فارایلیمنٹری ٹیچرزکوٹ لکھپت کی طرف سے1.54ملین روپےکی ادائیگیوں کاریکارڈ فراہم نہیں کیاگیا۔ریکارڈ کی عدم فراہمی کی وجہ سےاکاونٹس کی حیثیت مشکوک ہوگئی ہے۔

قوانین کے مطابق تمام سرکاری ادارے اوران کے سربراہان آڈیٹرجنرل کوریکارڈفراہم کرنے کےپابندہیں اورریکارڈفراہم نہ کرنیوالے افرادکے خلاف قانونی کاروائی کی جاسکتی ہے۔آڈٹ ڈیپارٹمنٹ نے مطالبہ کیاہے کہ آڈٹ کے لئے ریکارڈفراہم نہ کرنیوالے افرادکے خلاف قانونی کاروائی کی جائےاورریکارڈفراہم کیاجائے تاکہ اخراجات کی تحقیقات کی جاسکیں۔

دوسری بے ضابطگی مشکوک ادائیگیوں سے متعلقہ ہے جن کی مالیت5.97ملین روپےہے۔ایک لاکھ سے زائد کوئی بھی ادائیگی صرف چیک کے ذریعے کی جاسکتی ہے جبکہ سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے ایسانہیں کیابلکہ دوقسطوں میں نقدادائیگیاں کی گئی ہیں۔ مجموعی طورپرسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے پبلک اکاونٹس کمیٹی کی ہدایات کونظراندازکیاہے۔

سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ

سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میں بھی دوقسم کی مالی بے ضابطگیاں پائی گئی ہیں۔پہلی 33.11ملین روپے کی ادائیگیوں کاریکارڈ نہ  فراہم نہ کرناہے جبکہ دوسری بے ضابطگی 2.59ملین روپے کی زائدادائیگیاں ہیں۔آڈٹ کے مطابق سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے مطلوبہ ریکارڈفراہم نہیں کیاہے انہیں اس امرکاپابندکیاجائے کہ مطلوبہ ریکارڈفراہم کریں اورذمہ دارافراد کے خلاف قانونی کاروائی کریں۔

آڈٹ نے اس بات کابھی پتاچلایا ہے کہ کئی افرادکوتنخواہوں اورالاونسز کی مدمیں زائدادائیگیاں کی گئی ہے اورگورنمنٹ ٹریننگ کالج فارٹیچرزآف دی ڈیف کے تمام ملازمین کوچھٹیوں پرہونے کے باوجودتنخواہ اورالاونسزدئیے گےہیں۔

آڈٹ نے  مطالبہ کیاہے کہ زائدادائیگیوں کوواپس لیاجائے اورمحکمانہ کنٹرول بہترکیاجائے تاکہ آئندہ ایسی بے ضابطگیاں نہ ہوں۔

یاد رہے آڈیٹرجنرل پاکستان نے چندروزپہلے پنجاب ہایرایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے اکاونٹس میں 11ارب روپے کی مالی بے ضابطگیوں کاسراغ لگایاتھا لیکن اس پرحکومت پنجاب کی خاموشی معنی خیزہے ۔

Print this entry

Comments

comments