ملک کوفوری طور پر 4000 پی ایچ ڈی سکالرز کی اشد ضرورت ہے۔ڈاکٹرمختاراحمد

ملک کوفوری طور پر 4000 پی ایچ ڈی سکالرز کی اشد ضرورت ہے۔ڈاکٹرمختاراحمد
September 28 21:49 2017 Print This Article
لا ہور (علی ارشد سے) ہا ئر ایجوکیشن کمیشن پا کستان کے چئیر مین ڈاکٹر مختار احمد نے افغان طلبہ کو سکالر شپس دینے کی تقریب کے بعد میڈیا بریفنگ دیتے ہو ئے کہا کہ ہا ئر ایجوکیشن میں ملکی صورتحال بہتر بنانے کے لیے فوری طور پر 4000 پی۔ ایچ۔ڈی سکالرز کی اشد ضرورت ہے۔ جبکہ حالیہ اعدا دوشمار کے مطابق ہم 11000 پی ایچ ڈی سکالرز تیار کر چکے ہیں ۔ پا کستان میں یہ تناسب 26 فیصد بنتا ہے اور ویثرن 2025 کے تحت یہ شرح 40 فیصد تک لے کر جا نے کا ارادہ ہے۔ انٹر نیشنل رینکنگ میں آنے کے لیے ہمیں جا معات کے تمام امورکو بہتر بنانا ہو گا اور خود کو ٹھیک کیے بغیر کوا لٹی ایجوکیشن دینا ممکن نہیں ۔تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر مختار احمد نے ہا ئر ایجوکیشن کمیشن کی پندرہ سالہ کارکردگی کے بارے میں میڈیا کو بر یفنگ دیتے ہو ئے کہا کہ11 ستمبر 2002 کو وجود میں آنے والا یہ ادارہ پا کستان کی تا ریخ میں تعلیمی انقلاب بن کر ثابت ہوا ہے۔ 2002 میں پا کستان کی جا معات کی تعداد صرف 59 تھی اور طلبہ کی تعداد 2 لاکھ 76 ہزار تھی جن میں خواتین کا تناسب 32 ریکارڈ کیا گیا تھا۔سابقہ ادوار کی نسبت چار گنا اضافے کے ساتھ 2017 میں پا کستان کی کل جا معات کی تعداد188 ہے جبکہ طلبہ و طالبات کی تعداد 14 لاکھ ہو گئی ہے۔ خواتین طا لبات کی تعدادبڑھ کر 48 فیصد جا پہنچی ہے اور خواتین تمام شعبوں میں بازی لے رہی ہیں ۔ چئیر مین ایچ ای سی نے مزید بتایا کہ ملک بھر میں 110 یونیورسٹیوں کے ڈاکٹریٹ ڈگری پروگرام اور40 ایم فل پروگرام معیار پر پورا نہ اترنے کی وجہ سے بند کر دیے گئے ہیں۔اعلی تعلیم کے میدان میں کوا لٹی پر کسی صورت دبا ؤ قبول نہیں کیا جائے گا۔ ملک میں 3.1 ملین بچے سرکاری کالجز میں زیر تعلیم ہیں جن کی بہتری کے لیے صوبائی حکومتوں کو بھر پور کردار ادا کرنا ہو گا۔ ڈاکٹر مختار احمد نے بتایا کہ ہا ئر ایجوکیشن کمیشن ملک بھر میں 2 لاکھ51 ہزار مختلف سکالر شپس میرٹ اور شفافیت کی بنیاد پر فرا ہم کر چکا ہے۔ ویثرن 2025 میں پا کستان بھر میں جا معا ت کی تعداد 300 ہو جا ئے گی۔ہا ئر ایجوکیشن کمیشن کا موجودہ بجٹ 107 بلین روپے ہے جو کہ بین الاقوامی سطح کے لحاظ سے بہت کم ہے۔ ادارے کے قیام سے پا کستانی قوم اور معاشر ے کو ایک نئی امیدحاصل ہوئی ہے جس کا کا میابی کے ساتھ تسلسل بہت ضروری ہے۔

Back to Conversion Tool

Print this entry

Comments

comments